Latest Notifications : 
    داعی توحید نمبر

التصريح بما تواتر في نزول المسیح  -  ایک تعارف (قسط سوم)  

Date : Thursday 18th of January 2024 12:01:18 PM

 التصريح بما تواتر في نزول المسيح  -  ایک تعارف 

( قسط - 3)

کتاب کی ابتداء میں محققِ کتاب شیخ عبد الفتاح أبوغدہ کا کتاب کی تیسری اشاعت پر لکھا ہوا ایک پیش لفظ ہے - اس میں وہ لکھتے ہیں کہ اس کتاب کی وجہِ تصنیف مصنف کے نزدیک یہ تھی کہ ایک گمراہ فرقہ " قادیانیہ" کے کفر و ضلالت اور ملّتِ اسلامیہ سے خارج ہونے کی وجوہات سے پردہ کشائی کی جائے جیسا کہ علامہ کشمیری رحمہ اللہ کے شاگرد مفتی محمد شفیع عثمانی رحمہ اللہ نے اپنے مقدمے میں اس کی تفصیل دی ہے - پھر انہوں نے اُن اسباب پر بھی روشنی ڈالی ہے جنہوں ...


سلطان الحق شہیدی ۔شعری ثقافت کا آخری باب

Date : Saturday 16th of December 2023 01:39:12 PM

 سلطان الحق شہیدی  - شعری ثقافت کا آخری باب 

سلطان الحق شہیدی کشمیری'  اردو اور فارسی شاعری کے تہذیبی سفر میں ایک اہم ترین سنگ میل کی حیثیت رکھتے تھے- ان کے کلام میں جہاں ایک طرف کلاسیکی شعراء کی بازگشت سنائی دیتی ہے وہیں دوسری طرف انہوں نے عصری احساسات کی ترجمانی کا بھی حق ادا کیا- وہ ہمارے شعری منظر نامے کے ایک کہنہ مشق شاعر تھے جو فنِ شعر پر اپنے تبحر کے ساتھ ساتھ فکر و نظر کی سلامتی' پاکیزگی اور طہارت کا رمز بھی تھے 
ترقی پسندی کے زمانہِ عروج میں بھی انہوں نے اپنی صالح قدروں سے گریز نہیں کیا- اسی لیے ان کا کلام وقتی اور عارض...


شعر و شاعری کی تاریخ اسلامی نکتہ نگاہ کی روشنی میں

Date : Monday 27th of November 2023 04:02:36 AM

شعر وشاعری کی تاریخ اسلامی نکتہ نگاہ کی روشنی میں

بسم اللّٰہ الرحمٰن الرحیم
کفر ٹوٹا خدا خدا کرکے
لایا اس بت کو التجا کرکے
سب سے پہلے میں جناب محقق عصر ڈاکٹر شکیل صاحب کا شکریہ ادا کرتا ہوں کہ انہوں نے میری گذارش پر غور فرماکر مجلس علمی جموں وکشمیر کے گروپ میں ۔۔۔احسن الشعراکذبہ ۔۔۔کی معنوی جہتیں کے عنوان سے دماغ سوز مضمون سینڈ فرمایا ۔
میں نے تقریباََ تیس سال قبل وادی شعر وشاعری کو خیر باد کیا ھے ۔
لہذا میرے لیے اس مضمون میں کوئِی سوغات نہیں ھے کیونکہ مثل مشہور ھے
لکل فن رجال
لیکن میرے عزیزاں گرامی قدر میرے عجیب وغریب قدر دان ہی...


سفر نامہ خطہ پیر پنچال (قسط سوم)

Date : Monday 24th of July 2023 11:36:06 AM

قسط سوم
مغل روڈ کی وجہ تسمیہ یہ ہے کہ اس راستے سے مغل سلاطین وارد کشمیرہوتے تھے اور مختلف جگہوں پر سرائیں قائم کیں علی سرائے آج بھی اپنے آب و تاب  کے ساتھ موجود ہے لیکن حکمرانوں کی عدم توجہی کی داستان سنارہی ہے چند ثانیوں کیلئے ہماری گاڑی نے راحت کی سانس لی اورہم کھلی فضا میں قدرت کی کاریگری اور مغلوں کے فن تعمیر سے محظو ظ ہوگئے۔ اسی راستے پر  ایک اور سرائے سکھ سرائے کے نام سے موسوم ہے ہم کشمیری میں راحت اور آرام کیلئے سوکھ کا لفظ استعمال کرتے ہیں اور اردو میں سکھ چین بھی مستعمل ہے اور اس سرائے کی وجہ تسمیہ یہی ہے کہ یہاں پر مغل سلاطین اپنی لشکر اور بقیہ عملے کے ساتھ ...


سفرنامہ خطہ پیر پنچال(قسط دوم) 

Date : Sunday 2nd of July 2023 09:22:49 AM

(قسط دوم) 
گذشتہ سے پیوستہ 
اور اس علاقے کا ایک المیہ بھی ہے کہ یہاں کی پیدوار
مولوی عبد اللہ وکیل ہیں جو قادیانیوں کے لاہوری گروپ سے تعلق رکھتے تھے انکے فرزند شمیم احمد شمیم (ایڈیٹر اخبارآئینہ سرینگر) بھی قادیانیت سے متاثر تھے۔ مولانا سید حسین شاہ صاحب


سفر نامہ پیر پنچال

Date : Monday 19th of June 2023 02:35:48 PM

سفرنامہ خطہ پیر پنچال۔ 
''قسط اول''
از مولانا غلام محمد پرے صاحب
(لاوے پورہ سرینگ
ر)

مجلس علمی جموں و کشمیر ایک علمی تحریک ھے اور اسکے محرک و مؤسس محترم غلام نبی آسی صاحب فتح گڑھی ہیں۔ حضرت والا ماہر تعلیم بھی ہیں اور محکمہ تعلیم میں ایک بڑے عہدے پر فائز رہے ہیں۔ اس علمی تحریک کو وسعت سے ھمکنار کرنے کیلئے حضرت نے خاکسار کو حکم فرمایا کہ خطہ پیر پنچال میں بھی مجلس علمی کو متعارف کرنے کیلئے ایک سفر کیا جائے۔ خاکسار نے حکم کی تعمیل کیل...


اِظہاردین

Date : Tuesday 25th of October 2022 06:52:26 AM

اِظہاردین
  نہایت ادب سے تجھے اے خدا
شب و روز کرتاہوں دل سے دعا
  یہ اظہارِ دین ہے مشیت تری
اسی میں صرف زندگی ہو میری
 وظیفہ میرا ہو یہ سب سے بڑا
فضل سے مجھے کر اسی پر کھڑا
تری چاہتوں پر مجھے کر فِدا
 بنادے یہی کام میرا مُدعا
اُمت توڑنا ہے بڑی اک خطا
سلیقہ مجھے جوڑ کا کر عطا
بٹے مسلموں کو میں یکجا کروں
یہی کام کرتے میں یارب مروں
  نواز ش وہاں کی بڑی اے خدا
جو اپنے فضل سے کرے تو عطا
ہمیں اس سے محروم ہر گز نہ کر
 ترا اس میں کچھ بھی نہیں ہے ضرر
 غریبوں کا ہوگا مفت میں بھلا
ہمیں صالحوں سے خدایا ملا
  خلاصہ ہے اظہ...


Contemporary Writing and the Responsibilities of Muslim Scholars

Date : Thursday 7th of October 2021 04:37:58 AM

تحریر و تصنیف کا عمل انسانی فکر و نظر کی ترسیل و تبلیغ میں ایک اہم ترین وسیلہ اور سب سے زیادہ مؤثر ذریعہ ہے۔ابتدائے آفرینش سے ہی انسان نے تحریر کے ذریعے اپنے خیالات کو دوسرے ہم جنسوں تک پہنچانے کی سعی  کی ہے۔اگر چہ ما فی الضمیر  کی ادائیگی پہلے صور و اشکال کے ذریعے ہوتی رہی،لیکن بہت جلد حروف نے ان کی جگہ لی اور پھر لکھنے پڑھنے کا وہ طویل سلسلہ چل پڑا جو آج کے دور تک ممتد ہے اور مستقبل پر بھی سایہ فگن ہو رہا ہے۔

    تحریر و تصنیف کا کام پہل...